We have moved all non-book items like Speeches, Madani Pearls, Pamphlets, Catalogs etc. in "Pamphlet Library"

Book Name:Yateem kisay kehtay hain?

بیان فرمایا ہے :)میرے بڑے بھائی جب فوت ہوئے تو اس وقت تک والدِ مرحوم عَلَیْہِ رَحْمَۃُ اللّٰہِ الْقَیُّوْم کا تَرکہ تقسیم نہیں ہوا تھا۔ان کے چھوڑے ہوئے مال ہی میں کاروبار ہوتا رہا۔ بڑے بھائی جان کا انتقال ہونے پر میں سخت آزمائش میں آ گیا کیونکہ ان کے پانچ یتیم بچے بھی تھے اور ان یتیم بچوں کی ماں بھی۔اب بھائی کی ملکیت والی ہر چیز میں ان سب کا حق شامِل ہو گیا۔ اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَزَّوَجَلَّ میں نے شریعت کے مطابق ترکہ تقسیم کیا اور ان کو زائد پیش کیا تاکہ میری طرف اُن کا کوئی حق رہ نہ جائے مگر پھر بھی خوف آتا تھا کہ کہیں ان یتیموں کے مال میں مجھ سے حق تَلفی نہ ہو گئی ہو۔اَلْحَمْدُ لِلّٰہ عَزَّوَجَلَّ اب میرے پانچوں بھتیجے بالغ ہو چکے ہیں اور میں نے اپنے پانچوں بھتیجوں اور ان کی امّی جان سے مُعافی حاصِل کر لی ہے۔اللہ  عَزَّوَجَلَّ  انہیں درازی عمر بالخیر عطا فرمائے اور ہر طرح سے اپنی حِفظ و امان میں رکھے،اٰمِیْن بِجَاہِ النَّبِیِّ الْاَمِیْن صَلَّی اللّٰہُ تَعَالٰی عَلَیْہِ وَاٰلہٖ وَسَلَّم۔

یتیم مُعاف نہیں کر سکتا

سُوال:اگر یتیم بچّے بخوشی مُعاف کر دیں تو کیا معافی ہو سکتی ہے؟نیز مسائل معلوم نہ ہونے کے سبب جس نے نابالغ یا یتیم کا مال کھایا اور یہ بھی معلوم نہیں کہ کتنا کھایا اور اب وہ بچے بالغ ہو چکے ہیں اسے کیا کرنا چاہیے؟